Picture Gallery 2021

مظفرآباد 13 اپریل 2021 ء
قائمقام چیف جسٹس آزاد جموں وکشمیر جسٹس راجہ سعید اکرم خان نے آزادکشمیر میں جاری موسم بہار کی شجر کاری مہم کے سلسلہ میں آزاد جموں وکشمیر سپریم کورٹ کے سبزہ زار میں پودا لگایا۔ علاوہ ازیں سینئر جج آزاد جموں وکشمیر عدالت العالیہ جسٹس صداقت حسین راجہ، سابق چیف جسٹس چوہدری محمد ابراہیم ضیاء، صدر سینٹرل بار ایسوسی ایشن راجہ آفتاب خان اورایڈووکیٹ جنرل راجہ انعام اللہ خان نے بھی پودے لگایے۔ شجرکاری کی اس تقریب میں سیکرٹری جنگلات سید ظہور الحسن گیلانی، سپریم کورٹ و ہائی کورٹ بار کے عہدیداران واراکین، سینئر وکلاء، خواتین وکلاء اور محکمہ جنگلات کے آفسیران بھی موجود تھے۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے چیف جسٹس راجہ سعید اکرم خان نے کہا کہ کشمیر کی خوبصورتی جنگلات سے ہے، گرین کشمیر ہی ہمارا مشن ہے اس کی تکمیل کے لیے ہر سال درخت لگائے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اللہ کا بھی حکم ہے کہ جس نے ایک درخت لگایا اس نے جنت میں اپنا گھر بنایا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ اس وقت درختوں کی بہت ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنگلات کے حکام کو کہتا ہوں کہ درخت لگانے سے زیادہ درختوں کی حفاظت کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہر سال شجر کاری کی مد میں کروڑوں روپے کے فنڈز خرچ ہوتے ہیں۔ درخت زمین پر بھی نظر آنے چاہیں۔ صرف درخت لگا کر چھوڑنا نہیں چاہیے، ان کی حفاظت بھی یقینی بنائی جائے۔

 
01-April-2021
Honorable Chief Justice of Azad Jammu & Kashmir Mr. Justice Raja Saeed Akram Khan addressing the senior officers of the Supreme Court during an important staff meeting held at Principal Seat Muzaffarabad today the 1st of April, 2021.
 
مظفرآباد /میرپور 23مارچ
یوم پاکستان کے موقع پر سپریم کورٹ آف آزاد جموں وکشمیر مرکزی دفتر مظفرآباد و سرکٹ بنچ ہاء میں پرچم کشائی کی تقریب منعقد ہوئیں۔ مرکزی دفتر مظفرآباد میں ڈپٹی رجسٹرار جبکہ برانچ رجسٹری میرپور میں رجسٹرار سپریم کورٹ نے پرچم کشائی کی۔ پرچم کشائی کی تقریبات میں آفیسران سپریم کورٹ و عملہ شریک ہوئے۔ تقریب کے موقع پر پاکستان کے استحکام، سلامتی اور خوشحالی کے ساتھ ساتھ مقبوضہ کشمیر کی بھارت سے آزاد ی اور کورونا وائر س میں مبتلا لوگوں کی مکمل اور جلدشفا یابی کے لئے دعائیں کی گئیں۔

 

نیلم 11 مارچ    2020

چیف جسٹس آزادجموں وکشمیر جسٹس راجہ سعیداکرم خان نے کہاہے کہ جج کاعہدہ بڑی آزمائش ہے عہدے کی شان پر سمجھوتہ نہیں ہونا چاہئے۔عدالت کاکام انصاف پر مبنی فیصلے کرنا ہے اور عدالت کے احترام کو ہر صورت قائم رکھا جائے۔ ججز کو دلیری کیساتھ فیصلے کرنے چاہیں۔ انصاف کی فراہمی ججز اور وکلاء کی ذمہ داری ہے۔ ڈسٹرکٹ بار نیلم کے نومنتخب عہدیداران نئی ذمہ داریاں سنبھالنے پر مبارکباد کے مستحق ہیں۔ ان خیالات کا اظہار چیف جسٹس آزادجموں وکشمیر جسٹس راجہ سعیداکرم خان نے ڈسٹرکٹ بار نیلم کے نومنتخب عہدیداران کی حلف برداری تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نیلم کا خطہ مجاہدوں اور شہداء کا خطہ ہے کسی کی پسند و نا پسند پر فیصلے نہیں دئے جا سکتے مضبوط عدلیہ کیلئے مضبوط بار کا ہونا لازم ہے۔عدالتوں کاکام فیصلے کرناہے ججز کو آئین وقانون کے مطابق دلیری کیساتھ فیصلے کرنے چاہئیں۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صداقت حسین راجہ جسٹس عدالت العالیہ آزادجموں وکشمیر نے کہاہے کہ بار اور بینچ کے رشتہ کومضبوط بنانے سے عوام تک فوری انصاف کی فراہمی کو ممکن بنایا جا سکتا ہے۔ عدالتوں میں ججز کو انصاف کے تقاضوں کو مد نظر رکھتے ہوئے فیصلے کرنے چاہیے۔انصاف پر مبنی فیصلے کر تے رہیں گے۔ وکلاء اور عدلیہ کا باہم رشتہ احترام کا ہے۔ تنقید برائے اصلاح ہونی چاہیے۔ تقریب سے وائس چیئرمین بار کونسل خواجہ مقبول وار ایڈووکیٹ، صدر بار امجد حسین لون و دیگر نے خطاب کیا۔ تقریب میں سابق وزیر تعلیم سکولز میاں عبدالوحید ایڈووکیٹ، سابق صدر بار میرنذیر دانش ایڈووکیٹ، سید شاہد بہار ایڈووکیٹ سپریم کورٹ، راجہ اطہر علی خان ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نیلم،اسسٹنٹ کمشنر سید عمران عباس نقوی، ضلع قاضی رشید گل، شیخ ایاز میر ایڈیشنل ڈسٹرکٹ جج نیلم، خواجہ حبیب الرحمن سینئر سول جج نیلم، احسن الحق سینئرتحصیل قاضی آٹھ مقام،افتخار خواجہ سول جج اٹھ مقام، ہارون الرشید ایڈیشنل تحصیل قاضی اٹھ مقام، خواجہ محمدسلطان ایکسٹر اسسٹنٹ کمشنر اٹھ مقام، عارف حمید پی ڈی ایس پی، سردار ظہیر ڈی ایس پی اٹھ مقام، میر گوہر الرحمن ایڈووکیٹ سابق صدر ڈسٹرکٹ بار نیلم، عبدالعزیز مغل سابق ممبر بارکونسل سردار ریاض خان ممبربارکونسل سمیت دیگر وکلاء، صحافیوں، سول سوسائٹی کی کثیر تعداد نے تقریب میں شرکت کی اور نومنتخب ممبرڈسٹرکٹ بار نیلم کو مبارکباد پیش کی۔ حلف لینے والے نو منتخب عہدیداران میں امجد حسین لون ایڈووکیٹ صدر، میر سجاد گوہر ایڈووکیٹ نائب صدر، مفتی مظہر الزمان ایڈووکیٹ سیکرٹری جنرل، محترمہ جوریہ عروج جائنٹ سیکرٹری، سید صدام حسین کاظمی ممبرایگزیکٹیو کمیٹی، عبدالصمود اعوان ایڈووکیٹ ممبرایگزیکٹو کمیٹی، راجہ راشد بصیر ایڈووکیٹ و دیگر شامل تھے۔

 

اسلام آباد   7مارچ 2021

چیف جسٹس آزاد جموں وکشمیر جسٹس راجہ سعید اکرم خان نے ملینیم یونیورسل کالج اسلام آباد میں 21ویں صدی میں انسانی حقوق کے تحفظ کے عنوان سے منعقدہ تقریب میں شرکت کی۔ تقریب میں سابق چیف جسٹس گیمیاجسٹس علی نواز چوہان، ایڈووکیٹ سپریم کورٹ پاکستان حسن رضا پاشا، نامور وکیل اور سیاستدان احمد رضا قصوری، سینئر ایڈووکیٹ سپریم کورٹ پاکستان افشاں غضنفر، سابق جج ڈاکٹر ساجد قریشی اور ایڈووکیٹ سپریم کورٹ قوسین فیصل مفتی نے شرکت کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس آزاد جموں وکشمیر جسٹس راجہ سعید اکرم خان نے کہا کہ ہندوستان مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین ترین خلاف ورزیاں کر رہا ہے بھارتی حکومت کی جانب سے بھارتی آئین کے آرٹیکل 370اور 35-Aکو ختم کرنے اور بھارت میں صریحاً مسلمہ عالمی قوانین و خلاف انسانیت مسلم دشمنی پر مبنی قانون سازی کرنے کی وجہ سے نہ صرف جنوبی ایشیاء بلکہ پوری دنیا کو تباہی اور جنگ کی طرف دھکیل رہی ہے۔ بھارتی چہرہ دستیوں کو لگام دینے میں تاخیر عالمی امن کے حوالے سے خدشات بڑھا رہی ہے۔ 73 سال گذر جانے کے باوجود کشمیر میں استصواب رائے نہ ہونا عالمی طاقتوں اور اقوام متحدہ کا دوہرا معیار اور ناکامی ہے۔ کشمیری بھارت کا جابرانہ تسلط کسی طور بھی قبول کرنے کو تیار نہیں۔بھارتی قابض افواج کی جانب سے نہتے کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے انسانیت سوز مظالم، بڑے پیمانے پر ہونے والی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں، حراستی قتل عام کے بڑھتے ہوئے واقعات،محاصروں، گھر گھر تلاشیوں اور خواتین کی آبروریزیوں کی انسانی حقوق کی تنظیموں کی نشاندہی کے باوجود انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں میں ملوث بھارتی انتہاء پسند حکومت اور دیگر اداروں کی جانب سے مکمل سرپرستی اور تحفظ فراہم کیئے جانے کی پالیسیوں پر آنکھیں بند کر کے اگر عالمی طاقتوں نے اس کھیل کو اسی طرح جاری رہنے دیاور برصغیر کی دو ایٹمی طاقتوں کے درمیان کشیدگی کی وجہ اور سبب بننے والے مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں، مسلمہ بین الاقوامی اصولوں، کشمیری عوام کی امنگوں اور خواہشات کے مطابق فوری حل کروانے کی قابل عمل اور سنجیدہ کوششیں نہ کیں تو نہ صرف خطے کے عوام بلکہ پوری انسانیت کو اس کے سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔تقریب کے اختتام پر چیف جسٹس آزاد جموں وکشمیر راجہ سعید اکرم خان کو کالج کی طرف سے شیلڈ پیش کی گئی۔

Muzffarabad (04th March, 2021)

62nd Shariah (Islamic Law) Course Trainees of the Shariah Academy of International Islamic University, Islamabad visited the Supreme Court of Azad Jammu & Kashmir today 4th March, 2021.

مظفرآباد 03 مارچ 2021

جسٹس غلام مصطفی مغل سابق سینئر جج سپریم کورٹ آزاد جموں و کشمیر کےاعزاز میں عدلیہ کے لیے شاندار خدمات پر اپنے عہدہ کی آئینی مدت مکمّل کرنے کے بعد بھی الوداعی دعوتوں کا سلسلہ  جاری، گزشتہ روز اسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل خورشیدِ انور مغل کی جانب سے جسٹس غلام مصطفی مغل کے اعزاز میں ظہرانہ دیا گیا۔ تقریب میں جسٹس راجہ سعید اکرم خان چیف جسٹس آزاد جموں و کشمیر،قائم مقام چیف جسٹس ہائی کورٹ آزاد جموں و کشمیر جسٹس اظہر سلیم بابر ، سینئر جج عدالت العالیہ جسٹس محمد شیراز کیانی، جسٹس صداقت حسین راجہ جج عدالت العالیہ، سابق چیف جسٹس آزاد جموں وکشمیر جسٹس چوہدری ابراہیم ضیاء ، ایڈووکیٹ جنرل آزادجموں وکشمیر راجہ انعام اللہ خان، سابق ایڈووکیٹ جنرل کرم داد ایڈووکیٹ، اسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل راجہ ایاز فرید، صدر تحصیل بار نصیر آباد راجہ امجد عباسی ایڈووکیٹ، سیکرٹری جنرل تحصیل بار نصیر آباد راجہ داود احمد خان، سابق صدر تحصیل بار پٹہکہ راجہ خورشیدِ خان ایڈووکیٹ، راجہ سعید خان ایڈووکیٹ، نصیر احمد راجہ ایڈووکیٹ و دیگر نے شرکت کی.

مظفرآباد 02 مارچ 2021

چیف جسٹس آزادجموں وکشمیر جسٹس راجہ سعید اکرم خان شاہد علی اعوان ایڈووکیٹ کے والد محترم کی وفات پر فاتحہ خوانی کر رہے ہیں